قصور: عوام کی صحت پر ٹینری مالکان اور ADC (G)کی سودے بازی اور ملازمین کا معاشی استحصال

قصور:(مہر محمد عابد) عوام کی صحت پر ٹینری مالکان اور ADC (G)قصورکے عوام کی صحت پر ٹینری مالکان اور ADC (G)کی سودے بازی اور ملازمین کا معاشی استحصال، حکومت پنجاب کے تمام سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 25فیصد اضافے کے نوٹیفکیشن پر عمل درآمد کو نامعلوم وجوہات کی بناء پر روک کر ملازمین کا معاشی استحصال کیاجارہاہے، تنخواہوں میں اضافے کے متعلق مینجمنٹ کمیٹی کی واضح منظوری کے باوجود ضلعی انتظامیہ لیت ولعل سے کام لے رہی ہے، مہنگائی سے ملازمین شدید پریشانی کا شکار، ملازمین کا ڈپٹی کمشنر سمیت حکام بالا سے نوٹس لے کر حکومت پنجاب کے جاری کردہ نوٹیفکیشن پر فی الفور عمل درآمد کا مطالبہ، تفصیلات کے مطابق حکومت پنجاب نے تمام ملازمین کی تنخواہوں میں 25فیصد اضافے کیلئے نوٹیفکیشن جاری کیا جس کا نفاذ ٹریٹمنٹ پلانٹ کے ملازمین پر بھی ہوتاہے کیونکہ محکمہ ہذا کے منظورشدہ ایچ آر مینول کے مطابق حکومت پنجاب جوبھی ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ کرے گی اُس کا اطلاق ٹریٹمنٹ پلانٹ کے ملازمین پر بھی ہوگا جس کی منظوری مینجمنٹ کمیٹی بشمول چیئرمین ڈپٹی کمشنر /منیجنگ ڈائریکٹر KTWMAپہلے ہی دے چکے ہیں لیکن امسال سابق ڈپٹی کمشنر آسیہ گُل نے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل /پراجیکٹ منیجر KTWMAشبیر حسین چیمہ کے ساتھ مل کر ٹریٹمنٹ پلانٹ کے تمام ملازمین کا معاشی استحصال کرتے ہوئے صرف اپنی اور پراجیکٹ منیجر کی تنخواہ میں اضافہ کی منظوری مینجمنٹ کمیٹی سے حاصل کرلی ۔

جبکہ مینجمنٹ کمیٹی میں شامل ٹینری مالکان نے اپنے مفاد کی خاطر دونوں افسران سے سودے بازی کرتے ہوئے ہرسال کی طرح پانی کے یونٹ ریٹ کو نہ بڑھنے دیا جس سے محکمہ ہذا لاکھوں روپے ماہانہ کا نقصان برداشت کرنے کے ساتھ ساتھ شدید مالی مشکلات سے دوچار ہے حالانکہ سالانہ یونٹ ریٹ کے بڑھانے کے متعلق مینجمنٹ کمیٹی پہلے سے ہی منظوری دی چکی ہوئی ہے جس میں اضافہ نہ کرکے ٹریٹمنٹ پلانٹ کو غیرفعال کرنے میں انتظامیہ اور ٹینری مالکان کی ملی بھگت نے کلیدی کردار اداکیاہے جس کی بناء پرنہ صرف قصور کی آبادی بلکہ گردونواح کے ہزاروں دیہاتی کینسر، ہیپاٹائٹس اور دیگر مہلک بیماریوں میں مبتلا ہورہے ہیں۔

تنخواہ کے بڑھانے کے متعلق جب ملازمین نے سابق ڈپٹی کمشنر /منیجنگ ڈائریکٹرKTWMAکو درخواست گزاری تو انہوں نے درخواست پراجیکٹ منیجر کو مارک کردی جوکہ پراجیکٹ منیجر نے ڈسٹرکٹ اکاؤنٹس آفیسر قصور/ڈائریکٹرفنانس KTWMAکو کمنٹس کے لیے مارک کردی جس پر ڈائریکٹر فنانس نے ملازمین کی تنخواہ میں اضافہ قانونی قرار دیتے ہوئے اسے ملازمین کا حق قرار دیا لیکن ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل /پراجیکٹ منیجر نے جان بوجھ کر ڈاک کو دبا لیا اور 3ماہ گزرجانے کے باوجود ملازمین کی تنخواہ میں اضافہ نہ کرکے اُن کا معاشی استحصال کیاجارہاہے جوکہ ٹریٹمنٹ پلانٹ کے ملازمین کے ساتھ سراسر زیادتی اور ناانصافی کے زمرے میں آتاہے حالانکہ مہنگائی کے اس دور میں تنخواہوں میں اضافہ ملازمین کا بنیادی حق ہے جس سے ضلعی انتظامیہ کا افسر جان بوجھ کر اُن کو محروم رکھ رہا ہے۔ ملازمین نے نئے تعینات ہونے والے ڈپٹی کمشنر سے اس بارے میں نوٹس لے کر فی الفور ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے کا مطالبہ کیاہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں