سعودی عرب: ایران سے جنگ نہیں چاہتے مگر دفاغ کا حق محفوظ کرے

 سعودی عرب :(صاف بات )سعودی فرمانروا شاہ سلمان کا کہنا ہے کہ ایران کے ساتھ جنگ نہیں چاہتے  لیکن دفاع کے لیے ہر پل تیار ہیں۔

عرب نیوز کے مطابق سعودی شوریٰ کونسل سے خطاب کرتے ہوئے شاہ سلمان نے ایران پر زور دیا کہ وہ اپنے توسیع پسند نظریے کو ترک کردے۔ انہوں نے ایران میں جاری حالیہ پرتشدد مظاہروں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی پالیسیوں کے نتیجے میں اس کی اپنی ہی عوام کو نقصان پہنچا ہے۔

سعودی فرمانروا کا کہنا تھا کہ ہمیں امید ہے کہ ایرانی حکمران حکمت کا راستہ اختیار کرتے ہوئے عالمی سطح پر اپنی پالیسیوں پر غور کریں گے۔ شاہ سلمان کا کہنا تھا کہ عالمی برداری ایران کے میزائل اور ایٹمی پروگرام کو روکنے میں کردار ادا کرے،سعودی عرب اپنے دفاع کے لیے انتہائی اقدام اٹھانے میں ایک لمحہ کی تاخیر نہیں کرے گا۔دوسری جانب سعودی وزارت خارجہ نے ایران کے ‘فردا’ جوہری پلانٹ سے متعلق امریکی مؤقف کا خیر مقدم کیا ہے۔

امریکا نے ایران کی جانب سے جوہری سرگرمیاں دوبارہ شروع کرنے پر ‘فردا’ جوہری پلانٹ پرپابندیوں کو دی گئی چھوٹ 15 دسمبر سے ختم کرنے کے اعلان کیا تھا۔ خیال رہے کہ رواں ماہ  ایران نے اقوام متحدہ کے جوہری انسپکٹر کا اجازت نامہ منسوخ کر تے ہوئے  فردا جوہری پلانٹ پر یورینیم افزودگی دوبارہ شروع کرنے کا اعلان کیا تھا۔ ایران میں پیٹرول کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف گذشتہ 7 روز سے  مظاہرے جاری ہیں جن میں اب تک 100 سے زائد افراد کی ہلاکت کی اطلاعات ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں