لاہور: 3 سال میں کوالٹی بہتر نہ کی تو آئل ریفائنریز بند کردیں گے: وزیراعظم

لاہور:(صاف بات) 3 سال میں کوالٹی بہتر نہ کی تو آئل ریفائنریز بند کردیں گے: وزیراعظم 

لاہور میں ماحولیاتی آلودگی کے حوالے سے پریس کانفرنس میں وزیراعظم نے سیاسی حریفوں پر تنقید نہ بھولے اور کہا کہ اللہ کا کرم ہے اقتصادی ٹیم نے محنت کی اور ورلڈ بینک نے تعریف کی لیکن یہ لوگ سمجھ رہے تھے کہ ہم ناکام ہو جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان ڈیزل کے پرمٹ فتح کرنے اسلام آباد آئے تھے، ان لوگوں کو خطرہ تھا کہ ان کی دکانداریاں بند ہو جائیں گی، یہ ایک مافیا ہے، ان کا مفاد اپنا پیسہ بچانا ہے۔پنجاب میں اکھاڑ پچھاڑ پر ان کا کہنا ہے کہ میں چیلنج کرتا ہوں جو کچھ پنجاب میں اب ہوا پہلے کبھی نہیں ہوا، یہ لوگ وزیراعلیٰ پنجاب کے پیچھے پڑے ہوئے ہیں، میں نے اور وزیراعلیٰ نے بیٹھ کر بیروکریسی میں تبدیلیوں کا فیصلہ کیا، بہترین بیورو کریٹس اور آئی جی لیکر آئے ہیں، پہلی بار پرانے اور نئے پنجاب میں فرق نظر آئے گا۔

سابق وزیراعظم نواز شریف کی صحت سے متعلق عمران خان کا کہنا تھا کہ پنجاب کے ڈاکٹرز کی رپورٹ کو تفصیل سے دیکھا، اس میں ایسا تھا کہ مریض کی حالت ٹھیک نہیں جس پر انسانی ہمدردی کی بنیاد پر باہر جانے کی اجازت دی، عدالت نے کہا ہے کہ ہر ایک یا دو ہفتے بعد رپورٹ دی جائے گی لہٰذا اب جلد پتا چل جائے گا۔ پریس کانفرنس سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ آئل ریفارئنریز کو کوالٹی اپ گریڈ کرنے کے لیے 3 سال دیے ہیں، اگر تین سال میں کوالٹی بہتر نہ کی تو آئل ریفائنریز بند کردیں گے۔انہوں نے کہا کہ چاول کی فصل کی باقیات جلانے کا مسئلہ حل کریں گے، مشینری درآمد کریں گے جس سے فصلوں کی باقیات جلانے کے بجائے فائدہ ہوگا اور آلودگی نہیں ہوگی۔ ان کا کہنا ہے کہ اسٹیل کارخانوں اور بھٹیوں سے آلودگی ہوتی ہے، اینٹوں کے بھٹوں میں زگ زیگ ٹیکنالوجی لائی جائے گی، اس سے آلودگی نہیں ہوگی، لاہور میں 60 ہزار کینال پر اربن جنگلات اگائیں گے۔

۔

اپنا تبصرہ بھیجیں