اسلام آباد : پرویز مشرف کے فیصلے پر ادارے کی تضحیک میں مصروف جماعتوں کا بیانیہ قومی بیانیے سے نہیں ملتا‘

اسلام آباد : پرویز مشرف کے فیصلے پر ادارے کی تضحیک میں مصروف جماعتوں کا بیانیہ قومی بیانیے سے نہیں ملتا‘۔ فردوس عاشق اعوان

اسلام آباد میں خصوصی عدالت نے سابق صدر و آرمی چیف جنرل (ر) پرویز مشرف کو غدار قرار دیتے ہوئے سزائے موت کا حکم سنایا۔ پاک فوج نے بھی سابق آرمی چیف کو غدار قرار دینے اور سزائے موت کے فیصلے پر اعتراض کیا ہے اور ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ پرویز مشرف غدار نہیں ہیں۔وفاقی حکومت کی جانب سے بھی وزیراعظم عمران خان کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان اور اٹارنی جنرل انور منصور خان نے پریس کانفرنس کی۔پریس کانفرنس کرتے ہوئے فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ عسکری قیادت اور حکومت قومی مفاد کے لیے ہر محاذ پر آگے بڑھتے ہوئے داخلی اور خارجی محاذ پر قابو پانے میں کامیاب ہوئی ہے، معیشت کے مثبت اشاریئے، پاکستان کو عالمی سطح پر پذیرائی ملی، تمام عالمی اداروں کی جانب سے مثبت اعشاریوں کی تعریف اس بات کی نشاندہی ہے کہ عمران خان اور عسکری قیادت نے مل کر معیشت کے استحکام کے لیے کردار ادا کیا۔

انہوں نے کہا کہ افواج پاکستان اور عسکری اداروں میں کام کرنے والے فوجی جوان سیاچن، بھارت کے خلاف محاذ جنگ پر، لائن آف کنٹرول اور ورکنگ باؤنڈری پر دشمن کے دانت کھٹے کرنے میں مصروف ہیں، ایسے حالات میں ان کے عزائم بلند کرنا ہمارا قومی فریضہ ہے، ایسی صورتحال میں جب داخلی اور خارجی محاذ پر پاکستان کامیابیاں سمیٹ رہا ہے، ایک نیا پاکستان جو انصاف سب کے لیے کی بات کرتا ہے، انصاف کے تقاضے پورے کرتے ہوئے عمران خان کی جدوجہد 2 نہیں ایک پاکستان کی ہے، ایسی صورتحال میں ایسا فیصلہ ٹی وی اسکرینز پر نظر آیا۔

ان کا کہنا ہے کہ اِس فیصلے کے بعد جو لوگ جشن منا رہے ہیں، یہ وہی لوگ ہیں جنہوں نے 2008 میں پرویز مشرف سے حلف لیا تھا، یہ اپنی سیاسی تسکین کے لیے جس انداز میں اس فیصلے کی تشریح کر رہے ہیں، ان کا بیانیہ قومی بیانیہ سے کسی طور پر مطابقت نہیں رکھتا۔ فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ یہ تاثر دیا جا رہا ہے کہ فوج ایسا ادارہ ہے جو قومی مفاد سے لاتعلق پلیٹ فارم ہے، یہ پہلی دفعہ ہے کہ افواج پاکستان نے جس انداز میں جمہوری حکومت کی حمایت کی ہے، جمہوریت کی آبیاری کی ہے، افواج پاکستان کے جمہوری رویے پروان چڑھے ہیں، کچھ سیاسی نادان دوست ادارے کی تضحیک میں مصروف ہیں، کسی فرد واحد کو ٹارگٹ کرتے کرتے اس سے آگے بڑھ کر ادارے کی ساکھ پر حملہ آور ہوئے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں