وزیرریلوے شیخ رشید کاویڈیو بیان،کوتاہی کااعتراف

وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے رحیم یارخان میں تیزگام حادثے میں لگنے والی آگ سے جاں بحق مسافروں کے لواحقین اور زخمیوں کیلئے امدادی رقم کا اعلان کرتے ہوئے اپنی کوتاہی کا اعتراف کیا ہے۔ سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری ویڈیوبیان میں شیخ رشید نے بتایا کہ آج صبح 6، ساڑھے 6 بجے تبلیغی جماعت کے امیر، حسین امیرصاحب نے 2 کوچز بک کروائی تھیں جن میں محراب پور حیدرآباد ، نواب شاہ سے سواریوں کو بٹھایا گیا۔ حادثہ 2 سلنڈرز اور ایک چولہا پھٹنے سے حادثہ پیش آیا۔ امیر حسین صاحب حیات ہیں۔ جاں بحق ہونے والوں کیئے 15 لاکھ روپے اور زخمیوں کیلئے 5 لاکھ روپے امداد کااعلان کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ فوج اور دیگر امداد کیلئے پہنچ چکے ہیں ۔ میں خود بھی آرمی چیف کا مشکور ہوں کہ انہوں نے میرے لیے ٹرانسپورٹ کا اننتطام کیا اور میں نور خان ائر بیس سے رحیم یار خان جا رہا ہوں تا کہ امدادی کاموں کا خود جائزہ لے سکوں۔ شیخ رشید نے بتایا کہ امیر حسین سے رابطہ ہوگیا ہے، ان کے پاس تمام لوگوں کے نام موجود ہیں۔ ہم متاثرہ افراد کی فیملیز سے رابطہ کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 7 کروڑ لوگ سالانہ ریلوے سے سفرکرتے ہیں، ہمارے دورحکومت میں ان افراد کی تعداد میں ایک کروڑ افراد کا اضافہ ہوا۔ ویگنوں کی قلت کے باعث تبلیغی جماعت کے 2 لاکھ لوگ زیادہ ترریلوے سے سفر کرتے ہیں ، اسی لیے ہم نے رائے ونڈ ریلوے اسٹیشن پر 134 ٹرینوں کا 2 منٹ کااسٹاپ رکھا۔ وزیرریلوے نےاعتراف کرتے ہوئے کہا کہ یہ ہماری کوتاہی ہے مسافر چولہے لےجانے میں کامیاب ہوئے، چھوٹے اسٹیشنوں پر ہمارے پاس اسکینرز موجود نہیں ہیں۔ خونی حادثے کا بہت افسوس ہے،اللہ تعالی جاں بحق افراد کے درجات بلند کرے۔ واضح رہے کہ کہ جمعرات 31 اکتوبر کی صبح تیزگام ایکسپریس کراچی سے لاہور جا رہی تھی کہ رحیم یار خان کے تحصیل لیاقت پور کے قریب ٹرین کی 3 بوگیوں میں آگ لگنے

سے 73 افراد جاں بحق اور 40 سے زائد زخمی ہوگئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں