کراچی، سندھ ہائیکورٹ کا محکمہ ٹرانسپورٹ کو فوری کرائے طے کرنے کا حکم

سندھ ہائی کورٹ نے محکمہ ٹرانسپورٹ کو فوری کرائے طے کرنے کا حکم دے دیا۔

آج  پبلک ٹرانسپورٹ میں من مانے کرایوں سے متعلق کيس کی سماعت ہوئی جس میں عدالت نے کہا کہ اگر کرائے طے نہ کيے گئے تو توہين عدالت کی درخواست دائر کی جائے گی۔ عدالت ںے اپنی آبزوریشن میں کہا کہ ٹرانسپورٹ مافیا کو بےلگام کس نے چھوڑ رکھا ہے؟ کیا محکمہ ٹرانسپورٹ کے پاس کرایوں کا کوئی طریقہ کار موجود ہے؟ ڈی آئی جی ٹریفک کی جانب سے عدالت ميں جواب جمع کرایا گیا لیکن جواب پر ڈی آئی جی ٹریفک کے دستخط نہ ہونے پر عدالت برہم ہوگئی۔ جسٹس محمدعلی نے ریمارکس دیے کہ کیا اتنا معلوم نہیں تحریری جواب پر دستخط ضروری ہوتا ہے۔ سرکاری وکیل کو ہدایت کی کہ آئی جی کو خط لکھیں کس طرح رپورٹس پیش کی جا رہی ہیں۔ درخواست گزار شہری کا وقف تھا کہ 2015 کے بعد سے کرایوں کا کوئی نوٹیفکیشن جاری نہیں ہوا مگر کرایے بڑھائے جا رہے ہیں۔ ٹرانسپورٹ مافیا بے لگام ہوچکی۔ محکمہ ٹرانسپورٹ کے مطابق کرایوں کو طے کرنے کےلیے کمیٹی بنا دی گئی ہے

Pic10-058
KARACHI: Jul10- Passengers are travelling on the top roof of local transport bus as due to the closure of CNG in provincial capital. ONLINE PHOTO by Syed Asif Ali

جلد ہی کمیٹی میں فیصلہ کر لیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں