صرف قوانین ہی نہیں ہمارا مذہب بھی ہمیں ماحولیاتی آلودگی سے متعلق درس دیتا ہے۔ وزیر اعظم

 ماضی میں فضائی اور آبی آلودگی پر توجہ نہیں دی گئی، صرف قوانین ہی نہیں ہمارا مذہب بھی ہمیں ماحولیاتی آلودگی سے متعلق درس دیتا ہے۔وزیر اعظم پاکستان 

اسلام آباد میں 3روزہ ساتویں ایشیائی علاقائی کنزرویشن کانفرنس کے ابتدائی سیشن سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ میں خوش قسمت پاکستانیوں ہوں جو پاکستان کے تمام علاقے سے واقف ہوں، پاکستان قدرتی خوبصورتی اور وسائل سے مالامال ملک ہے، ہمیں مستقبل کی نسلوں کا احساس کر کے فیصلے کرنا ہوتے ہیں، پاکستان گھنے جنگلات، طویل صحرا، بلند ترین پہاڑ پہاڑی سلسلے ہیں، شہروں میں رہنے والے زیادہ ترافراد قدرتی خوبصورتی نہیں دیکھ پاتے۔ انہوں نے کہا کہ جب میں پیدا ہوا تو پاکستان کی آبادی 4 کروڑ تھی آج 22کروڑ ہے، مجھے جلد ہی قدرتی ماحول کو پہنچنے والے نقصانات کا احساس ہوگیا تھا، یہ ہی وجہ ہے کہ ہماری حکومت نے خیبرپختونخوا میں حکومت بنانے کے بعد بلین ٹرین منصوبہ شروع کیا، پہلی بار کسی حکومت نے بڑے پیمانے پر ماحولیاتی تحفظ کیلئے قدم اٹھایا۔ وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ ماحولیات کا تحفظ دینی فریضہ ہے، پاکستان میں 12 ایکولوجیکل زونز ہیں، جنہیں ہمیں تحفظ دینا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں