اسلام اباد:مسلم لیگ ن کے رہنماء خواجہ آصف کو احتساب عدالت پہنچا دیا گیا

اسلام آباد:(صاف بات) مسلم لیگ ن کے پارلیمانی لیڈر اور سابق وزیر دفاع اور پانی و بجلی خواجہ آصف کو نیب عدالت پہنچا دیا گیا ، وہ نیب پراسیکیوشن روم میں موجود ہیں جہاں ان کی لیگی رہنماؤں سے ملاقات جاری ہے۔احاطہ ٔعدالت میں مسلم لیگ نون پنجاب کے صدر رانا ثناء اللہ، محسن شاہنواز رانجھا، مریم اورنگزیب سے خواجہ آصف نے ملاقات کی ، انہیں کچھ دیر بعد جج محمدبشیر کی عدالت میں پیش کیا جائے گا۔نیب کی جانب سے خواجہ آصف کا راہداری ریمانڈ حاصل کرکے انہیں نیب لاہور منتقل کیا جائے گا۔واضح رہے کہ قومی احتساب بیورو (نیب) نے گزشتہ روز خواجہ آصف کواسلام آباد سے گرفتار کیا تھا، ان پر ناجائز اثاثوں کا الزام ہے۔نیب لاہور کے مطابق خواجہ آصف کی گرفتاری کے وارنٹ چیئرمین نیب جسٹس جاوید اقبال کی جانب سے جاری کئے گئے۔

ملزم کیخلاف نیب قانون این اے او 1999کی شق (v) اور اینٹی منی لانڈرنگ ایکٹ 2010کی سیکشن (3) کے تحت تحقیقات جاری ہیں، ملزم خواجہ آصف نے مبینہ طور پر اپنی آمدن سے زائد اثاثہ جات بنائے جبکہ اثاثہ جات کی نوعیت، ذرائع اور منتقلی کو بھی چھپایا،ملزم خواجہ آصف نے 1991 میں بطور سینیٹر عہدہ سنبھالا جو بعد ازاں مختلف ادوار میں وفاقی وزیر اور ایم این اے بھی رہے۔عوامی عہدہ رکھنے سے قبل 1991میں ان کے مجموعی اثاثہ جات 51لاکھ روپے پر مشتمل تھے تاہم 2018تک مختلف عہدوں پر رہنے کے بعد ان کے اثاثہ جات 221ملین تک پہنچ گئے جو ان کی ظاہری آمدن سے مطابقت نہیں رکھتے۔نیب لاہور کے مطابق ملزم خواجہ آصف نے یو اے ای کی ایک فرم بنام M/S IMECO میں ملازمت سے 13 کروڑ روپے حاصل کرنیکا دعویٰ کیا تاہم دوران تفتیش وہ بطور تنخواہ اس رقم کے حصول کا کوئی بھی ٹھوس ثبوت پیش نہ کر سکے۔اس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ ملزم نے جعلی ذرائع آمدن سے اپنی حاصل شدہ رقم کو ثابت کرنا چاہا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں