کشمير کا مسئلہ حل کرکے سارے برصغير کے مسائل حل کرسکتے ہيں، اللہ کے تمام پيغمبروں نے انصاف اور انسانيت کا درس ديا۔ وزيراعظم عمران خان

 عمران خان نے کرتارپورراہداری کا افتتاح کردیا۔ تاریخی موقع پربھارت کےسابق وزیراعظم من موہن سنگھ ، سابق کرکٹرنوجوت سنگھ سدھو،بھارتی اداکار سنی دیول اوربھارتی پنجاب کے وزیراعلیٰ بھی موجود تھے۔ ہزاروں بھارتی اور غیر ملکی سکھ یاتریوں نے بھی تقریب میں شرکت کی۔ 

کرتار پور راہداری کی افتتاحی تقريب میں شرکت کے لئے عمران خان اور دیگر افراد نے اپنے سر کو سفيد کپڑے سے ڈھانپا ہوا تھا۔وزيراعظم عمران خان نے اپنے خطاب میں سکھوں کو بابا گرونانک کے جنم دن کی مبارکباد دی اور تمام سکھوں کو خوش آمديد کہا۔ انھوں نے کہا کہ يہاں آکر سکھ برادری کے دلوں ميں خوشی ہوتی ہے،آپ کسی کو خوشی دے کر اللہ کو خوش کرتے ہيں،ہمارے نبی رحمۃ للعالمين ہيں، تمام انسانوں کيلئے رحمت ہيں۔عمران خان نے کہا کہ جانوروں کے معاشرے ميں انصاف نہيں ہوتا،اللہ کے تمام پيغمبروں نے انصاف اور انسانيت کا درس ديا۔

بھارت سے متعلق وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ بات چيت کرکے کشمير کا مسئلہ حل کرسکتے ہيں،من موہن نے کہا کہ کشمير کا مسئلہ حل کرکے سارے برصغير کے مسائل حل کرسکتے ہيں، کشمير اب علاقائی نہيں بلکہ انسانيت کا مسئلہ بن چکا ہے،80 لاکھ لوگوں کوان کےحقوق سےمحروم کر ديا گيا ہے، کشميريوں سے ان کا بنيادی حق خود اراديت چھين ليا گيا۔ انھوں نے بھارتی وزیراعظم کے مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ مودی جی، انصاف سے امن ہوتا ہے،نا انصافی سے انتشار پھيلتا ہے،70 سال سے نفرتيں مسئلہ کشمير حل نہ ہونے کی وجہ سے ہيں،جب مسئلہ کشمير حل ہوجائے گا تو برصغير ميں خوشحالی آئے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں