قصور:وکیل کو ماسک لگانے کا کہنا مہنگا پڑ گیا،متعدد وکلاء کا ڈاکٹر پر بیہمانہ تشدد،ینگ ڈاکٹرز کی انصاف کیلئے پریس کانفرنس

قصور:(صاف بات) ٹی ایچ کیو ہسپتال کوٹرادھاکشن میں گزشتہ روز چیک اپ کیلئے آنیوالے وکیل کو ماسک لگانے کا کہنا سپیشلسٹ ڈاکٹر مہنگا پڑ گیا ۔ کوٹرادھاکشن کے متعدد وکلاء نے سپیشلسٹ ڈاکٹر آصف مقبول کو تشدد کا نشانہ بنا ڈالا۔ وکلاء کے اس امر کیخلاف ڈی ایچ کیو ہسپتال قصور میں احتجاجی پریس کانفرنس کرتے ہوئے ھیلتھ سٹاف کی نمائندہ تنظیموں وائی سی اے، وائی ڈی اے، پی ایم اے، وائی   پی اے اور وائی این اے کے عہدیداران صدر وائی سی اے قصور ڈاکٹر فراز چوہدری کا کہنا تھا کہ اسطرح کے شرمناک واقعات کی روک تھام اور ڈاکٹرز کی سیکیورٹی بے حد ضروری ہے۔ ضلع بھر کے ڈاکٹرز میں شدید خوف و ہراس پایا جاتا ہے۔ جبکہ صدر وائے ڈی اے قصور ڈاکٹر طاہر شاہین کا کہنا تھا کہ شرپسند عناصر کو نشان عبرت بنانا ضروری ہے۔ وکلاء تنظیمیں ایسے عناصر سے اعلان لاتعلقی کریں اور ضلعی انتظامیہ فوری ایکشن لے۔

 اس موقع پر انہوں نے کہ ڈی پی او قصور، ڈی سی قصور سے مطالبہ کیا کہ ملزمان کو فوری گرفتار کرکے انہیں انصاف فراہم کریں۔ ضلع انتظامیہ کو 48 گھنٹے کا الٹی میٹم دیتے ہوئے کہا کہ اگر واقعہ میں ملوث ملزمان کیخؒاف کوئی قانونی کاروائی عمل میں نہ لائی گئی تو ضلع بھر کے ہسپتال بند کرنے  پر مجبور ہوں گے۔ جس کا دائرہ کار پنجاب بھر تک پھیل سکتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں