اسلام آباد:وزیر اعظم نے پیکا ترمیمی آرڈیننس پر عملدرآمد روکنے کیلئے ڈی جی ایف آئی اے کو احکامات

اسلام آباد:(صاف بات) وزیراعظم نے ڈی جی ایف آئی اے کو ہدایات جاری کی ہیں کہ پیکا ترمیمی آرڈیننس پر عملدرآمد کے لئے قواعد و ضوابط بنانے پر کام جاری ہے، قواعد و ضوابط تیار ہونے تک کسی کو گرفتار نہ کیا جائے۔وزیراعظم آفس نے ایف آئی اے کو پیکا ترمیمی آرڈیننس کے تحت گرفتاری سے روک دیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم کی جانب سے اس حوالے سے گزشتہ ہی ہدایات جاری کی گئی تھیں، جو اب ڈی جی ایف آئی اے تک پہنچا دی گئی ہیں۔وزیراعظم آفس کی جانب سے جاری ہدایات میں کہا گیا ہے کہ پیکا ترمیمی آرڈیننس پر عملدرآمد کے لئے قواعد و ضوابط بنانے پر کام جاری ہے، قواعد و ضوابط تیار ہونے تک کسی کو گرفتار نہ کیا جائے، پیکا آرڈیننس پر کیسے عمل کرنا ہے قواعد و ضوابط میں تمام تفصیلات شامل ہوں گی۔

اس سے قبل اسلام آباد ہائیکورٹ میں پیکا ترمیمی آرڈیننس کیخلاف درخواست کی سماعت ہوئی۔ عدالت نے اٹارنی جنرل کو عدالتی معاونت کے لئے کل کے لئے نوٹس جاری کردیا۔ درخواست کی سماعت کے دوران چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہرمن اللہ نے کہا کہ عوامی نمائندے کے لئے تو ہتک عزت قانون ہونا ہی نہیں چاہیے۔ دنیا ہتک عزت کوڈی کرمنلائزکرنے کی طرف جارہی ہے۔ زمبابوے اوریوگنڈا نے بھی ہتک عزت کوڈی کرمنلائز کردیا۔چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ کا مزید کہنا تھا کہ ایف آئی اے پہلے ہی ایس او پیز جمع کرا چکی ہے۔ ایس او پیزکے مطابق سیکشن 20 کے تحت کسی کمپلینٹ پر گرفتاری عمل میں نہ لائی جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں