ماسکو:وزیراعظم عمران خان آج روسی صدر پیوٹن سے ملاقات کرینگے

ماسکو:(صاف بات) وزیراعظم عمران خان آج بروز جمعرات 24 فروری کو روس کے صدر ولادیمیر پیوٹن سے ون آن ون اہم ملاقات کریں گے۔دونوں رہنماؤں کے درمیان ملاقات میں دوطرفہ تعلقات اور افغانستان سمیت خطے کی صورت حال پر بات ہوگی، جب کہ توانائی شعبے پر بھی عمران خان اور پیوٹن بات چیت کریں گے۔وزیراعظم عمران خان روس کے صدر ولادیمیر پیوٹن سے ملاقات میں معاشی شراکت داری سمیت دیگر معاملات پر بات چیت کریں گے۔ اس کے علاوہ عمران خان اربوں ڈالر کے گیس پائپ لائن منصوبے کی تعمیر پر بھی زور دیں گے جو روسی کمپنیوں کے اشتراک سے شروع ہونا ہے۔ خیال رہے کہ دونوں رہنماؤں کے درمیان یہ ملاقات ایسے موقع پر ہو رہی ہے جب مغربی ممالک نے روس پر نئی پابندیاں عائد کردی ہیں۔وزیراعظم عمران خان کے دورہ روس سے متعلق جاری اعلامیہ کے مطابق صدر پیوٹن اور وزیراعظم عمران خان کی ملاقات اس دورے کا اہم ترین جزو ہے۔پاکستان کے وزیر توانائی کے ترجمان کے مطابق دونوں ممالک کی خواہش ہے کہ گیس پائپ لائن منصوبہ جلد سے جلد شروع کیا جائے۔اعلامیے کے مطابق دونوں سربراہان مملکت کی ملاقات میں اسلاموفوبیا، افغانستان کی صورتحال اور پاک روس تجارتی تعلقات خاص طور پر توانائی کے شعبے پر بات چیت ہوگی۔ وزیراعظم اس دوران روس کے نائب وزیراعظم، سرمایہ کاروں اور تاجروں سے بھی ملیں گے۔

گیارہ سو کلومیٹر طویل شمال جنوب گیس پائپ لائن کے منصوبے کا معاہدہ سال 2015 میں طے پایا تھا جس کی تعمیر کا خرچہ پاکستان اور روس نے مل کر اٹھانا تھا۔ اس کی تعمیر میں ایک روسی کمپنی کی مدد حاصل کی گئی تھی۔روس روانہ ہونے سے پہلے وزیراعظم عمران خان نے ایک انٹرویو میں یوکرین میں کشیدہ صورت حال اور روس پر عائد پابندیوں کے پاکستان پر ممکنہ اثرات سے متعلق خدشات کا اظہار کیا تھا۔منگل کو رشیا ٹودے کو دیے گئے انٹرویو میں وزیراعظم نے بتایا تھا کہ شمال جنوب گیس پائپ لائن منصوبے کی تاخیر کی ایک وجہ یہ ہے کہ ہم جن کمپنیوں کے ساتھ مذاکرات کررہے تھے ان پر امریکا نے پابندیاں عائد کردی تھیں۔انہوں نے کہا کہ مسئلہ یہ ہے کہ ایسی کمپنی تلاش کی جائے جس پر پابندیاں نہ عائد کی گئی ہوں۔ تاہم روس پر عائد پابندیوں کے گیس پائپ لائن منصوبے پر اثرات سے متعلق کچھ بھی کہنا قبل از وقت ہے۔ اس منصوبے کی تکمیل سے صوبہ پنجاب کے پاور پلانٹس کو درآمد شدہ قدرتی گیس پہنچائی جاسکے گی۔ پاکستان میں قدرتی گیس کی بڑھتی ہوئی کمی کے باعث بھی گیس پائپ لائن کا یہ منصوبہ خاص اہمیت کا حامل ہے۔

وزیراعظم عمران خان اس موقع پر ماسکو میں روس کی سب سے بڑی مسجد اور اسلامک سینٹر کا دورہ بھی کریں گے۔ بعد ازاں وزیراعظم دورہ روس مکمل کرنے کے بعد آج رات پاکستان کے لیے روانہ ہوجائیں گے۔دوسری جانب وزیراعظم عمران خان کے دورہ روس پر امریکا نے رد عمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکا نے پاکستان کو روس سے متعلق اپنی پوزیشن کے بارے میں آگاہ کیا ہے۔ ہر ذمہ دار جمہوری ملک روس پر باور کرائے کہ عدم استحکام پھیلانے والی جنگ سے بچا جائے

اپنا تبصرہ بھیجیں