لاہور:رکن پنجاب اسمبلی علیم خان بھی جہانگیر ترین گروپ کا حصہ بن گئے۔

لاہور:(صاف بات) پاکستان تحریک انصاف کے رہنماء اور رکن پنجاب اسمبلی عبدالعلیم خان نے آج جہانگیر ترین کی رہائشگاہ پر فارورڈ بلاک میں شامل اراکین سے ملاقات کی اور جہانگیر ترین کی زیر صدارت اجلاس میں شرکت کی۔اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جہانگیر ترین گروپ کے رکن سعید اکبر نوانی نے کہا کہ عبداعلیم خان نے ترین گروپ میں شمولیت کا اعلان کردیا ہے، آگے کا لائحہ عمل مل کر طے کرنے پر اتفاق ہوا ہے، آج کا اجلاس مشاورتی تھا، یہ دکھانا تھا کہ جہانگیر ترین کی سربراہی میں ہی اجلاس ہورہا ہے۔میڈیا سے گفتگو میں عبدالعلیم خان نے کہا کہ 10 سالہ دور میں تحریک انصاف کی جدوجہد میں بہت سے ساتھی عمران خان کے ساتھ تھے، اس جدوجہد کو نتائج تک پہنچانے کیلئے محنت کرنے میں جہانگیر ترین کا بہت بڑا کردار ہے، پی ٹی آئی والے جہانگیر خان ترین کے ممنون و مشکور ہیں، جہانگیر خان ترین کو پیغام دینا چاہتے ہیں کہ ہم نے آپ کو بھلایا نہیں ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ سیاست دوستوں میں اضافے اور مشکل میں دوستوں کے ساتھ کھڑے ہونے کا نام ہے، جہانگیر خان کا مشکل وقت میں ساتھ دینے والوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں، جدوجہد میں شامل ہر شخص کیلئے جہانگیر ترین قابل احترام ہیں، پی ٹی آئی کی کامیابی میں جہانگیر ترین کا چہرہ نمایاں ہے، جہانگیر خان ترین کو اہمیت کیوں نہیں دی گئی اس کا جواب کارکنوں کو سمجھ نہیں آسکا، وہ تمام لوگ جنہوں نے عمران خان کے ساتھ نئے پاکستان کی جدوجہد میں انتھک محنت کی اور خون پسینہ لگایا تھا انہیں نظر انداز کرنے کا آج تک جواب نہیں آیا۔علیم خان نے مزید کہا کہ جہانگیر ترین جلد واپس آئیں گے، حکومت بننے کے بعد برے وقت میں ساتھ دینے والے پیچھے چلے جاتے ہیں، اگر آج ہماری جماعت لوگوں کی امیدوں پر پورا اترتی تو کسی کے نظر انداز ہونے کا دکھ نہ ہوتا، پنجاب میں جو کچھ ہورہا ہے، جس طرح کی حکمرانی ہے، پی ٹی آئی کے مخلص کارکنوں اور ووٹ دینے والوں کو اس پر تشویش ہے۔رکن پنجاب اسمبلی کا کہنا ہے کہ آج یہی بات ہوئی ہے کہ جو تحریک کا حصہ اور مخلص تھے وہ ایک پلیٹ فارم پر اکٹھے ہوں، یہ ہم خیال دوستوں کا ایسا گلدستہ ہے جس میں وہ تمام لوگ شامل ہوں گے جو اس تحریک میں فعال کردار ادا کرتے رہے ہیں، پچھلے کچھ دن میں 40 سے زائد ارکان سے مل چکا ہوں، وہ سب تشویش کا شکار ہیں۔

عبدالعلیم خان نے یہ بھی کہا کہ ہماری کوشش ہے کہ تحریک انصاف کے تمام گروپوں کو یکجا کریں، ہم سب نے نئے پاکستان کی جدوجہد میں محنت کی ہے، اسے رائیگاں جاتا دیکھ کر افسوس ہوتا ہے، پی ٹی آئی کو ووٹ دینے والوں سے کہتا ہوں کہ آخری وقت تک پارٹی کو مضبوط اور متحد کرنے کی کوشش کریں گے، یہ ہم سب کی پارٹی ہے کسی فرد واحد کی نہیں، اسے متحد کرنے کیلئے سب یکجا ہوں گے۔ان کا کہنا ہے کہ ہم ایک ایسی جماعت کیخلاف لاہور میں کھڑے ہوئے تھے جس کا وزیراعظم اور وزیراعلیٰ پنجاب تھا، کسی سیٹ یا عہدے کیلئے تحریک میں شامل نہیں ہوئے تھے بلکہ ایک جذبے اور نئے پاکستان کیلئے اس کا حصہ بنے، عمران خان کا ساتھ وزیراعلیٰ بننے کیلئے نہیں دیا تھا، ان کا ساتھ اس لئے دیا تھا کہ عمران خان کی شکل میں واحد امید سامنے تھی، اس کوشش میں دن رات ایک کئے، پی ٹی آئی کے مخلص دوستوں کو موجودہ صورتحال سے نکلنے کیلئے فعال ہونا پڑے گا۔صحافیوں کے سوالوں کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میرے پاس وزیراعلیٰ پنجاب سے زیادہ بہتر گاڑیاں اور جہاز موجود ہیں جن میں سفر کرتا ہوں۔تحریک عدم اعتماد کے سوال کے جواب میں علیم خان کا کہنا تھا کہ اگر تحریک عدم اعتماد آتی ہے تو اس کا فیصلہ ہم سب مل کریں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں