اسلام آباد:سندھ ہاؤس ہارس ٹریڈنگ کا مرکز بنا ہوا ہے اس کیخلاف سخت ایکشن پلان کررہے ہیں، فواد چوہدری

اسلام آباد:(صاف بات) گرین یوتھ موومنٹ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ تقسیم ہند سے قبل یہاں ایسٹ انڈیا کمپنی کی حکومت تھی، آج بھی یہاں سامراج کے ایجنٹس موجود ہیں، اور عمران خان ملک کو سامراج کے ایجنٹس سے بچانے کیلئے جدوجہد کر رہے ہیں۔وفاقی وزیر نے کہا کہ اس ملک کی 63 فیصد آبادی نوجوانوں پر مشتمل ہے اور ہم اپنے مستقبل کو چوروں ڈاکوؤں کے حوالے نہیں کرسکتے، کل چھوٹا ڈان کہتا ہے کہ عمران خان کے بغیر حکومت بنائیں اور قومی حکومت بنائی جائے، کیا حکومت چوروں کے حوالے کریں، وہ چاہتے ہیں کہ ڈاکوئوں کی حکومت چوروں کو بچانے کے لئے آئے، ہم اپنے ملک کو ڈاکوؤں اور چوروں کے حوالے کبھی نہیں کرنے دیں گے۔فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ اس وقت ہارس ٹریڈنگ کا مرکز سند ھ ہاؤس ہے جہاں ممبران کی بولیاں لگائی جارہی ہے، خچروں اور گدھوں کا ایک بازار سجا ہوا ہے، سندھ ہاؤس بہت سا پیسہ منتقل کرنے کی اطلاعات ہیں اور یہاں لوگوں کو رکھنے کے لیے پولیس منگوائی گئی ہے، جس طرح سے منڈیاں لگ رہی ہیں آئین کے خلاف ہے اسی لیے ہم ہارس ٹریڈنگ کے خلاف مضبوط ایکشن پلان کر رہے ہیں۔

عمران خان کے حکم پر ہم ڈی چوک پر 10 لاکھ افراد لائیں گے، جلسہ کرنا ہمارا حق ہے، اور ہم جلسہ کریں گے، اپوزیشن 10 لاکھ افراد کا سن کر ڈر گئی ہے، ہم نے یہ نہیں کہا کہ ہم اپوزیشن کو ماریں گے،تحریک انصاف کے پاس انصار الاسلام جیسی تنظیم نہیں ہے ہم بد معاش نہیں، لیکن شریف آدمی کو اتنا نہ تنگ کرو کہ وہ بد معاش بن جائے، کیوں کہ جب شریف بندہ بد معاش بنتا ہے تو اچھے اچھوں کی بدمعاشی نکل جاتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان جوانوں کے مستقبل کی امید ہے، بچو اس وقت سے جب عمران خان نے نوجوانوں کو کال دے دی، ہم پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا اجتماع اسلام آباد میں کرکے دکھائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں