مالاکنڈ:ضمير کا سودا کرکے حکومت بچانی ہے تو ايسی حکومت پر لعنت بھيجتا ہوں ۔عمران خان

مالاکنڈ:(صاف بات) وزیراعظم عمران خاں کا درگئی میں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ايم اين ايز سن ليں ان کو ووٹ ڈالا تو پاکستان سمجھے گا آپ نے ضمير بيچا، يہ تينوں 35 سالوں سے چوری کررہے ہيں، لوگوں نے آپ کومعاف نہيں کرنا ۔ ممبران سےکہتا ہوں کہ پارٹی کا سربراہ آپ کےباپ کی طرح ہوتاہے، سب کو پتا چل گيا ہے آپ نے پارٹی چھوڑی توپيسہ لےکر چھوڑيں گے، آپ کا شاديوں ميں جانا بند ہوجائے گا۔عمران خان کا کہنا تھا کہ سودے بازی کو جمہوريت کا نام ديا جارہاہے، ساری قوم کے سامنے ضمیر کاسودا ہورہاہے اسکو جمہوریت نہیں کہتے، وقت آگيا ہے کہ عوام فيصلہ کريں کہ آپ کہاں کھڑے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ضمیرفروش پیسے لے کرملک کے سودے کرتاہے، کوئی بھی دين اپنے ضمير کو بيچنے کی اجازت نہيں ديتا، چوری کا پيسہ جمع کرکے ضميرخريدے جارہے ہيں، سارے ڈاکو ايک طرف اکٹھا ہوگئے ہيں اسلیے ملک ميں فيصلہ کن وقت آگيا ہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ایک ہوتا ہے لوٹا اور ایک ضمیر فروش یہ ضمیر فروش ہے کیونکہ لوٹا وہ ہو ہوتا ہے جو اقتدار کے پیچھے بھاگتے ہیں مگر یہ لوگ ضمیر کے سودے کررہے ہیں اور عدلیہ ، الیکشن کمیشن اور ملک کا نوجوان یہ سب دیکھ رہا ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ قوم کی اخلاقيات ختم ہوتی ہے تووہ محنت کرنا چھوڑديتی ہے ، يہ لوگ اس ملک کی اخلاقيات تباہ کرنے جارہے ہيں، ايک ملک پر بمباری اورجنگ بھی ہو تووہ پھر بھی کھڑا ہوجاتا ہے،مگر جن کی اخلاقیات تباہ ہوتی ہے وہ تباہ ہوجاتے ہیں۔ يہ ملک سے وہ کرنے جارہے ہيں جو دشمن بھی نہيں کرتا۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اللہ کا حکم ہے اس قسم کی سودے بازی کے خلاف کھڑے ہوں، جمہوريت کا جنازہ نکالا جائے تو قوم پرلازم ہے اسکےخلاف کھڑی ہو، وقت آگيا ہے کہ عوام فيصلہ کريں کہ آپ کہاں کھڑے ہيں۔انہوں نے کہا کہ پيپلزپارٹی والوں آپ نے نواز شريف پر حديبيہ پيپرز کا کيس بنايا، شہبازشريف آپ نے زرداری کاپيٹ پھاڑ کر چوری کاپيسہ نکالنا تھا، ن ليگ والوں نے آصف زرداری کو چوری پر2مرتبہ جيل ميں ڈالا، تم نے اپنے دور کے اربوں روپے کے کرپشن کے کيس بنائے تو میں ان سے سوال پوچھتا ہوں کہ جب چور آپ کے ساتھ مل جائے تو چوری بری چيز نہيں ہے؟انہوں نے مزید کہا کہ ایک بےشرم نےتجويزدی کہ مجھے ايبسلوٹلي ناٹ نہيں کہنا چاہيےتھا، ضمير کا سودا کرکے حکومت بچانی ہے تو ايسی حکومت پر لعنت بھيجتا ہوں ۔عمران خان کا کہنا تھا کہ شہبازشريف آپ کی سب سے اچھی خاصيت بوٹ پالش کرناہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ان کے پيسے ملک سے باہر پڑے ہيں ، 10 سالہ اقتدار ميں ان کی پاليسی قوم کےلئےنہيں تھی۔ يہ ملک آگے تب بڑھے گاجب ہم اپنے پيروں پرکھڑے ہوں گے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ فضل الرحمان 30سال سے دین کےنام پر سیاست کررہے ہیں، کبھی آپ نے باہر جاکر اسلاموفوبیا اور مسلمانوں پرظلم کی بات کی؟ دنياکےڈيڑھ ارب مسلمانوں کاکيس میں نے لڑااور جيتا ، کورونا میں اپنے لوگوں کو جیسے بچايا دنيا ہماری مثال ديتی ہے۔وزيراعظم کا کہنا تھا کہ میڈیا ڈاکوؤں کے ساتھ کھڑا ہے جو جمہوریت کا جنازہ نکال رہےہیں، میڈیا سمجھ جائےقوم آپکو دیکھ رہی ہے۔عمران خان کا کہنا تھا کہ تھری سٹوجیز نے زور لگا کر میرے خلاف سازش کی، تينوں غلاموں نے باہر کے لوگوں کے گھٹنے دبا کر سازش رچی ہے مگر سن لو تم یہ میچ ہارنے لگے ہو۔انہوں نے کہا کہ جب ہماری آمدنی بڑھے گی توملک اپنے پيروں پرکھڑا ہوگا، پاکستان کی برآمدات ميں تاريخی اضافہ ہوا ہے، 3 سال ہم نے ان سے بات کی، دو ہزارارب کی تلوارہٹ گئی کیونکہ ریکوڈک معاہدہ نہ کرتاتو 2ہزار ارب اس ملک کو ہرجانہ دیناپڑتا مگر اب وہ وہ پاکستان میں 9ارب ڈالرکی تاریخی انویسمنٹ کرنے آرہے ہیں۔دنیا میں پٹرول کی قیمت اوپر گئی مگر ہم بجائے20روپے بڑھانے کے10روپے کم کی، ملک بھر میں پناہ گاہوں کا ایک نیٹ ورک بنارہاہوں، کارکے منصوبے ميں 200 ارب روپے معاف کرائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں