قصور: پتوکی میرج ہال میں انسانیت سوز واقعہ،باراتی کھانا کھاتے رہے قریب میں محنت کش باراتیوں کے تشدد سے جاں بحق ہونیوالے شخص کی لاش پڑی رہی۔

قصور:(صاف بات) الجنت میرج ہال پتوکی میں باراتیوں نے جیب تراشی کے الزام میں ایک پاپڑ بیچنے والے نوجوان محنت کش کو مبینہ تشدد کرکے ہلا ک کر دیا۔وزیر اعلی پنجاب لا نوٹس آئی پنجاب سے رپورٹ طلب کرلی تفصیلات کے مطابق محنت اشرف عرف سلطان پاپڑ بیچ کر اپنے بال بچوں کو پیٹ پالتا تھا گزشتہ رو ز وہ الجنت میرج ہال کے باہر پاپر فروخت کر رہا تھا کہ جہاں پر نور دین کے بیٹے آصف کی موضع موکل سے بارات آئی ہوئی تھی اس دوران کسی باراتی نے اس پر جیب تراشی سے موبائل فون چوری کرنے کا الزام لگا دیا اور چند باراتیوں نے اکٹھے ہو کر اس پر مبینہ تشدد شروع کر دیا اور اس کو اٹھا کر میرج ہال کے اندر لے گئے جہاں پر اسے ٹھڈوں، مکوں اور تھپڑو ں سے مبینہ تشدد کا نشانہ بناتے رہے جس سے وہ موقعہ جانبحق ہو گیا۔

اس دوران انتہائی افسوس ناک امر یہ کہ اس کی نعش میرج ہال کے اندر پڑی تھی جہاں پر تما م باراتی موجود تھے اور اس کی نعش کی موجودگی میں تمام براتی کھانا کھاتے رہے۔ دوسری طر ف وزیر اعلیٰ پنجاب اور آئی جی پنجاب اس خطر ناک واقعہ کا نوٹس لے لیا جس پر پتوکی سٹی پولیس نے مقدمہ درج کرکے شادی ہال کے مینجر سمیت 12 باراتیوں کو گرفتار کرکے حوالات میں بند کر دیا تا ہم پولیس مصروف تفتیش ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں