قصور:چند گھنٹو کی بارش نے ضلعی انتظامیہ اور میونسپل کمیٹی کی پول کھول دی،

قصور (سجاد انصاری)چند گھنٹو کی بارش نے ضلعی انتظامیہ اور میونسپل کمیٹی کی پول کھول دی، ڈپٹی کمشنر سمیت شہر کی سٹرکیں اور نشیبی علاقے ندی نالوں اور تلاب کا منظر پیش کرنے لگے،سینکٹروں گھروں اور دوکانوں میں پانی داخل، شہریوں نے اعلی حکام سے فوری نوٹس لینے اور نالوں کی صفائی کے لئے خرچ ہونے بھاری فنڈز کی چھان بین کا مطالبہ کیا ہے۔گزشتہ روز ہونیوالی بارش نے قصور شہر کو سوہنا شہر بنانے کی دعویدار ضلعی انتظامیہ کی کارکردگی کا پول کھو ل دیا اور ضلعی انتظامیہ کے عوامی مسائل حل کرنے کے جھوٹے دعوے بارش کے ساتھ ہی بہہ گئے۔ ڈپٹی کمشنر قصور آفس سمیت شہر کی سڑکیں اور آبادیاں مین شہباز خان روڈ، نور مسجد چوک، للیانی اڈا چوک، حاجی فرید روڈ،اندرون کوٹ بدر دین خان، لاہوری گیٹ، لنڈ ابازار،چاندنی چوک،تحصیلدار چوک، دوسہرا گراؤنڈ، دھنپت روڈ، ریلوے روڈ،جماعت پورہ، رڑاں گجراں، نیا بازار، صرافاں بازار، کوٹ عثمان خان، بلدیہ چوک، کوٹ غلام محمد خان،نیشنل بنک چوک، پتواں والا گیٹ، پرانا لاری اڈا، نور محل چوک، بستی قادرآباد، سٹیل باغ چوک، کھارا روڈ،کوٹ مراد خان، چوک شفیع محصولیہ، بستی صابری، بھسرپورہ، رکن پورہ، سلامت پورہ،لطیف پورہ، کوٹ حلیم خان،چو ک قتل گڑھی،کوٹ اعظم خان،کوٹ فتح دین خان،کالج روڈ، ڈنگی پورہ، بھٹہ چوک ودیگرعلاقوں میں نکاسی آب کا مناسب انتظام اور نالوں کی بروقت صفائی نہ ہونے کے باعث بارش کا پانی کھڑا ہو گیا۔

جو رات گئے تک نہ نکالا جا سکا اور شہر تالاب کا منظر پیش کرتا رہا۔ بارش کا پانی گھروں، دفاتر اور دکانوں میں داخل ہونے سے شہریوں کو شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑا اور عوام تبدیلی سرکار، ضلعی انتظامیہ اور میونسپل کارپوریشن کے ذمہ داران کو کوستے رہے۔ عوام کا کہنا ہے کہ ضلعی انتظامیہ بس سرکاری ہینڈ آؤٹ جاری کرنے تک محدود ہو چکی ہے اور بیورو کریسی کو عوامی مسائل سے کوئی لینا دینا نہیں۔ ان کی تنخواہیں ان کے اکاؤنٹس میں ہر ماہ باقاعدگی سے آجاتی ہیں اور کارکردگی کے حوالے سے ان کو کوئی پوچھنے والا نہیں۔عوام کو تو یہ جواب دہ ہے ہی نہیں لگتا ہے کہ حکومت بھی ان سے باز پرس نہیں کر سکتی۔ بیورو کریسی انگریز کا بوسیدہ نظام ہے جو عوامی مسائل حل کرنے کی بجائے حکومت پر حکمرانی اور ان کا استحصال کرنے کیلئے بنایا گیا تھا۔ افسوس اتنی دہائیاں گزرنے کے باوجود ہم اس نظام کو ختم یا تبدیل نہیں کر سکے جس کا خمیازہ غریب عوام بھگت رہے ہیں۔ شہر کی سیاسی، سماجی، فلاحی اور شہری تنظیموں نے وزیرا علیٰ پنجاب عثمان بزدار سے فوری نوٹس لے کر قصور کے شہریوں کے بنیادی مسائل حل کرنے اور غفلت برتنے والی ضلعی انتظا میہ،میونسپل کارپوریشن قصور کے خلاف کاروائی اور شہر کی نالوں کی صفائی پر خرچ ہونے والے بھاری فنڈز کے آڈت کا مطالبہ کیا ہے جبکہ اس سلسلہ میں ضلعی انتظامیہ اور میونسپل کارپوریشن کے ترجمانوں نے الزمات کی سختی سے تردید کرتے ہوئے اسے قدرتی آفت قرار دیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں